کوئٹہ میں دستی بم دھماکہ، دوسرا بم پھٹ نہ سکا خاتون اور بچی سمیت 4 افراد زخمی

کوئٹہ: ڈیجیٹل نیوز اردو(ویب رپورٹر)
سبزل روڈ پر شہید امیر دستی تھانے کے سامنے بم دھماکے کے نتیجے میں خاتون اور بچی سمیت چار افراد زخمی ہوگئے ہیں
پولیس کے مطابق اتوار کی سہ پہر سبزل روڈ پر واقعہ شہید امیر دستی تھانے کے قریب دستی بم کا دھماکہ ہوا جس کے زد میں آکر تین خواتین سمیت چار راہگیر زخمی ہوگئے جنہیں سول ہسپتال منتقل کردیا گیا۔ جبکہ جائے وقوعہ سے ایک اور دستی بم زندہ حالت میں برآمد ہوا۔ پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں نے علاقے کی ناکہ بندی کرکے بم ڈسپوزل اسکواڈ کو طلب کرلیا۔ بی ڈی ٹیم نے ملنے والے دستی بم کو ناکارہ بنادیا۔ جائےوقوعہ شنوائد اکھٹے کرلئے گئے جبکہ واقعہ کی تفتیش جاری ہے، ترجمان محکمہ صحت کے مطابق زخمیوں سول ہسپتال میں طبی امداد دی جارہی ہے جن میں 25 سالہ قیوم، 28 سالہ زبیر احمد، 17 سالہ کائنات، اور 13 سالہ بی بی حوا شامل ہیں۔وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے سبزل روڈ دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے دھماکے میں تین خواتین سمیت چار افراد کے زخمی ہونے پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے وزیراعلی نے زخمیوں کو علاج معالجہ کی بہترین سہولیات کی فراہمی اور شہر میں سیکیورٹی انتظامات کو مزید موثر بنانے کی ہدایت کی ہے ۔وزیراعلئ نے آئی جی پولیس کو ہدایت کی ہے دہشت گردوں کے خلاف آئی بی اوز جاری رکھے جائیں گے اور امن کے دشمنوں کو کیفر کردار تک پہنچانے میں کوئی کسر نہ اٹھا رکھی جاۓ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں