بلوچستان: سیلاب سے گرین بیلٹ کا کینال سسٹم مفلوج ہوگیا۔ حکام

نصیرآباد: ڈیجیٹل نیوزاردو (ویب ڈیسک)
سیلاب نے بلوچستان کے گرین بیلٹ کو تباہی سے دوچار کردیا ہے آبادی کے ساتھ ساتھ کینال سسٹم بھی بری طرح مفلوج ہو کر رہ گئی پٹ فیڈر کینال کے نقصان کا جائزہ لینے کیلئے وزیراعلیٰ بلوچستان کی انسپکشن ٹیم کے چیئرمین عبدالصبور کاکڑ نے صوبائی سیکرٹری آبپاشی عبدالفتاح بھنگر کے ہمراہ آر ڈی 280 کے مقام پر لگنے والے شگافوں اور تعمیراتی کام کا جائزہ لیا یہ بات ایس ای ایریگیشن عبدالحمید مینگل نے انسپکشن ٹیم کو بریفنگ دیتے ہوئے بتائی
سرکاری خبر کے مطابق ایس ای ایریگیشن نے مزید بتایا کہ مری بگٹی پہاڑی سلسلوں تونسہ اور کچھی کینال سے آنے والے سیلابی ریلوں نے پٹ فیڈر کینال کے اسٹرکچر کو بری طرح متاثر کیا اور مختلف جگہوں پر شگاف لگے مگر محکمہ ایریگیشن کے انجینئرز کی کڑی محنت کی بدولت پٹ فیڈر کینال میں پانی کی ترسیل کے عمل کو شروع کردیا گیا ہے تاکہ لوگ اپنی ضروریات کو پورا کریں بعد میں مزید کام کو جاری رکھا جائے گا اس موقع پر چیف انجینئر قاضی عبدالرزاق ایس ای ایریگیشن عبدالحمید مینگل ایکس ای این پٹ فیڈر کینال محمد اسلم لونی ایس ایس اوز امان اللہ گاجانی سید امجد شاہ جمعہ خان پٹھان سمیت دیگر آفیسران موجود تھے اس موقع پر سی ایم آئی ٹی کے چیئرمین عبدالصبور کاکڑ نے کہا کہ بلاشبہ سیلاب نے نصیرآباد ڈویژن میں عوام کے مال و جان اور ایریگیشن سسٹم کو شدید نقصان پہنچایا ہے صوبے کے واحد نہری نظام کی بہتری کے لیے ایریگیشن کے انجینئرز کی کاوشیں قابل ذکر ہیں مگر کام کی رفتار میں اضافہ ناگزیر بن چکا ہے خریف کے سیزن میں کاشتکاروں کو نقصان پہنچا اب کوشش کی جائے کہ کینالز سسٹم کی بحالی کے بعد ربیع سیزن میں پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے انہوں نے کہا کہ سپر پیسج نہ ہونے کی وجہ ہر سال کینال کو سیلابی صورتحال سے دوچار ہونا پڑتا ہے مستقبل میں عوام اور کینالز سسٹم کو سیلابی صورتحال سے محفوظ رکھنے کیلئے اقدامات کرنا ضروری ہے کیونکہ عوام اور حکومت ہر سال اس طرح کے نقصانات کا متحمل نہیں ہو سکتے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں