0

بلوچستان ضلع ژوب میں ہیضے کی وبا، دو بچے جاں بحق ہوگئے

کوئٹہ: ڈیجیٹل نیوز اردو ( ویب رپورٹر)
بلوچستان کے ضلع ژوب میں ہیضے کی وباء پھوٹ پڑی ہے جس سے اب تک 2 بچے جاں بحق جبکہ سینکڑوں افراد متاثر ہوکرہسپتال داخل ہوگئے ہیں۔ حالات کی سنگینی کے پیش نظر ضلع میں محکمہ صحت کی ایمرجنسی ٹیمیں الرٹ کرکے محکمہ کے اہکاروں کی چھٹیاں منسوخ کردی گئی ہیں حکام حالیہ بارشوں اور سیلابی صورتحال کے باعث ہیضے کی وبا سے مزید افراد کے متاثر ہونے کا خدشہ کررہے ہیں۔
ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر (ڈی ایچ او) ڈاکٹر مظفر شاہ کے مطابق گذشتہ پاچ دنوں میں شہر کے مختلف علاقوں بالخصوص خروٹ آباد نیو ناصر آباد شیرانی بازار اسلامیار میں ہیضے کی وباء سے سینکڑوں افراد متاثر ہوئے ہیں جن میں خواتین بچے اور بزرگ افراد شامل ہیں انہوں نے بتایا کہ ہیضے کی بیماری کے باعث تاحال دو کمسن بچے جاں بحق ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ ان دنوں کے دوران 400 سے زائد متاثرہ افراد ڈی ایچ کیو ہسپتال لائے گئے ہیں انہوں نے بتایا کہ حالیہ مون سون بارشوں اور ہیضے کی پھیلنے والی بیماری کے پیش نظر محکمہ صحت کے تمام ملازمین کی چھٹیاں منسوخ جبکہ ایمرجنسی ٹیمیں الرٹ کر دی گئی ہیں جو کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے مکمل طور پر تیار ہیں ڈی ایچ او خود تمام تر صورتحال کی نگرانی بھی کر رہے ہیں ماہرین صحت نے کہا ہے کہ ہیضے کے پیش نظر لوگ پانی ابال کر پئیں جبکہ خوراک میں بھی احتیاط برتیں
حکام کے مطابق مون سون کی حالیہ بارشوں اور سیلابی صورتحال کے باعث پانی آلودہ ہوگیا ہے جس سے ہیضے کی وبا پھیل گئی ہے تاہم محکمہ پی ایچ ای اس تاثر کو رد کررہی ہے

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

بلوچستان ضلع ژوب میں ہیضے کی وبا، دو بچے جاں بحق ہوگئے” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں