0

سول ہسپتال کوئٹہ کے اندر میڈیکل ریپ نظر آیا تو پولیس کے حوالے ہوگا، حکمنامہ جاری

کوئٹہ: ڈیجیٹل نیوز اردو(ویب رپورٹر)
میڈیکل سپریٹنڈنٹ سول سنڈیمن ہسپتال کوئٹہ نے عوامی مشکلات اور شکایات کے پیش نظر ہسپتال کی حدود میں نجی دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں (میڈیکل ریپ) کے داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔ حکمنامے میں بتایا گیا ہے کہ سول سنڈیمن اسپتال کی او پی ڈیز اور دیگر شعبوں میں مریضوں کی غیر معمولی رش کے باوجود ادویات کمپنی کے نمائندے ڈاکٹرز کا وقت ضائع کرتے ہیں۔

ایم ایس سول سنڈیمن اسپتال ڈاکٹر امین مندوخیل کی جانب سے تین جون کو اعلامیہ جاری کیا گیا ہے۔ جس میں بتایا گیا ہے کہ صوبے کے دور دراز پسماندہ علاقوں سے مریض علاج معالجے کے لئے آتے ہیں پہلی ترجیح مریضوں کا علاج ہے تاہم دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں کی ایک بڑی تعداد کی بھرمار کے باعث مریضوں کے لئے وقف ٹائم کا ضیاع ہوتا ہے۔ مریضوں کو مناسب وقت دینے اور غیر ضروری رش سے اجتناب کے لئے دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں کے ہسپتال کے اندر آنے بالخصوص او پی ڈی۔ وارڈز۔ مختلف شعبہ جات، یونٹس اور شعبہ حادثات میں داخلے پر مکمل پابندی عائد کردی گئی ہے،  اعلامیہ کے مطابق پابندی کا یہ اقدام بیرونی مریضوں اور اسپتال میں داخل مریضوں کو علاج معالجے کی بہتر طبی سہولیات کی فراہمی کے لئے اٹھایا گیا اعلامیہ میں ایسے نمائندوں کو متنبہ کیا گیا ہے کی اگر سول سنڈیمن اسپتال کی حدود میں دوا ساز کمپنیوں کا نمائندہ پایا گیا تو پولیس کے حوالے کرکے ایف آئی آر درج کی جائیگی

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

سول ہسپتال کوئٹہ کے اندر میڈیکل ریپ نظر آیا تو پولیس کے حوالے ہوگا، حکمنامہ جاری” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں