0

پیرکوہ میں ہیضے کی وبا بے قابو، پانی بحران پورے ڈیرہ بگٹی میں پھیلنے لگا

ڈیرہ بگٹی : ڈیجیٹل نیوز اردو (ویب ڈیسک)
بلوچستا کے ضلع ڈیرہ بگٹی کے تحصیل پیرکوہ میں پینے کے پانی کی قلت کے باعث ہیضے کی وبا مزید شدت اختیار کرگیا ھے،مزید تین ہلاکتیں، تین سو افراد اسہال سے متاثر ہوکر بی ایچ یو پیرکوہ پہنچ گئے صوبائی سیکرٹری ہیلتھ آغا صالح ناصر نے بھی حالات کی سنگینی کا اعتراف کردیا ڈیرہ بگٹی اور سوئی ٹاؤن سمیت ضلع کے اکثر علاقوں کو بھی قلت آب کا سامنا شروع ہوگیا ڈیرہ بگٹی کے مکینوں نے پانی کی عدم فراہمی پر شدید احتجاج کیا
محکمہ صحت کے حکام کے مطابق آلودہ پانی پینے سے پیرکوہ میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران رپورٹ ہونے والے تین سو کیسز میں سے متعدد افراد کی حالت تشویشناک ہے جبکہ وبا کے باعث انیس سالہ خاتون اور دو بچوں سمیت مزید 3 افراد جان بحق ہوگئے اسطرح سترہ اپریل سے لے کر اب تک پہر کوہ میں جاں بحق افراد کی تعداد 20 ہوگئی ہے۔گزشتہ روز ریکارڈ 450 ہیضے کے کیسز رپورٹ ہوئے تھے جس سے صورتحال مزید تشویشناک ہوگئی ہے
قلت آب کے مسئلے نے اب پیرکوہ کے بعد ڈیرہ بگٹی اور سوئی ٹاؤن سمیت ضلع کے اکثر علاقوں کا بھی رخ کرلیا ھے ہفتے کو ڈیرہ بگٹی کے مکینوں نے نواب بازار جانے والی سڑک بند کرکے محکمہ پی ایچ ای کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ مظاہرے میں شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرین نے حکومت اور محکمہ پی ایچ ای کے خلاف شدید نعرہ بازی کی اور صاف پانی کی فراہمی یقینی بنانے کا مطالبہ کیا
دوسری جانب وزیراعلی بلوچستان کی خصوصی احکامات پر سیکرٹری ہیلتھ بلوچستان صالح ناصر ہنگامی طور پر ہفتے کو ڈیرہ بگٹی پہنچ گئے انہوں نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے پیرکوہ میں حالات کی سنگینی کا اعتراف کیا سیکرٹری صحت بلوچستان نے بتایا کہ وبا کے باعث متاثرہ مریضوں کی تعداد میں روزانہ پچاس فیصد اضافہ ہورہا ھے جس کے باعث ڈیرہ بگٹی کے علاوہ بلوچستان کے دیگر علاقوں سے بھی ڈاکٹرز کے ٹیموں کو ڈیرہ بگٹی روانہ کیا گیا ھے سیکرٹری ہیلتھ کا کہنا تھا کہ وبا کی شدت پر قابو پانے یا خاتمے تک وہ ڈیرہ بگٹی میں ہی قیام کرینگے

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں