0

بلوچستان یونیورسٹی ،احتجاجی ریلی پر پولیس کا لاٹھی چارج کل جامعہ میں کلاسز کا بائیکاٹ اور قلم چھوڑ ہڑتال ہوگی

کوئٹہ :ڈیجیٹل نیوز اردو (ویب رپورٹر)
بلوچستان یونیورسٹی میں احتجاجی مظاہرین اور پولیس اہلکاروں کے درمیان شدید دھکم پیل لاٹھی چارج، جوائئنٹ ایکشن کمیٹی کی ریلی کو پولیس نے جامعہ سے باہر جانے سے روک دیا، مظاہرین نے انتظامیہ مخالف اور مطالبات کے حق میں شدید نعرے لگائے ۔ پولیس نے مظاہرین پر لاٹھی چارج کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے کل قلم چھوڑ ہڑتال اور کلاسز کے بائیکاٹ کا اعلان کردیا
تفصیلات کے مطابق جامعہ بلوچستان کے اساتذہ ، ملازمین اور آفیسرز ایسوسی ایشنز پر مشتمل جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی جانب سے مطالبات کے حق میں ریلی نکالی گئی ، ریلی کے شرکاء جونہی بلوچستان یونیورسٹی کے مین گیٹ کے قریب پہنچے تو پولیس نے انہیں روک دیا، اس دوران مظاہرین اور پولیس کے درمیان شدید دھکم پیل ہوئی ، کافی کوششوں کے باوجود پولیس نے ریلی کو یونیورسٹی سے باہر جانے سے روک دیاجس کے بعد مظاہرین نے وائس چانسلر کے دفتر کے سامنے اکیڈمک بلاک میں احتجاج کرتے ہوئے شدید نعرہ بازی کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ یونیورسٹی آف بلوچستان ٹیچرز، آفیسرز اور ایمپلائز ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام تنخواہوں کی بروقت ادائیگی بشمول اضافہ شدہ 44 فیصد ہاوس ریکوزیشن، اردلی الاونس،یوٹیلٹی الاونس ،25 فیصد ڈسپیریٹی الائونس، ہاوس بلڈنگ ایڈوانس، ریٹائرڈ اساتذہ، آفیسرز اور ملازمین کو پینشنز کی بروقت ادائیگی، بائیومیٹرک حاضری، آفیسرز اور ملازمین کے پروموشن، ٹائم سکیل سمیت دیگر درپیش مسائل کے حل کےلئے احتجاجی ریلی آرٹس بلاک سے نکالی گئی ریلی جب جامعہ بلوچستان کے مین گیٹ پر پہنچی تو وائس چانسلرپرو وائس اورخزانہ آفیسر کی ایماء پر پولیس نے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے پرامن اساتذہ، آفیسرز اور ملازمین پر وحشیانہ تشدد اور لاٹھی چارج کی جس سے کئی اساتذہ کرام، بشمول خواتین اساتذہ، آفیسرز اور ملازمین شدید زخمی ہوئے، اور مظاہرین کو اپنے جائز مطالبات کے لئے احتجاج کرنے نہیں دیا، اس موقع پرمظاہرین نے جامعہ بلوچستان کے مین گیٹ پر احتجاجی دھرنا دیا جس میں اساتذہ، آفیسرز اور ملازمین نے شرکت کی۔ احتجاجی دھرنے سے پروفیسر ڈاکٹر کلیم اللہ بڑیچ، شاہ علی بگٹی، نذیر احمد لہڑی، پروفیسر فرید خان اچکزئی، پروفیسر عبدالباقی جتک، ڈاکٹر عابدہ بلوچ، حافظ عبدالقیوم، محبوب شاہ اور دیگر نے خطاب کیا جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے جامعہ کے تمام اساتذہ، آفیسرز اور ملازمین سے اپیل کی ہے کہ کل بروز جمعرات کو جامعہ بلوچستان کے ایڈمن بلاک کے تمام آفیسرز اور ملازمین احتجاجی طور پر قلم چھوڑ ہڑتال کرینگے اور جامعہ کے تمام اساتذہ بشمول خواتین اساتذہ، آفیسرز اور ایمپلائز کل احتجاجی ریلی اور جامعہ بلوچستان کے مین گیٹ کے سامنے سریاب روڈپر احتجاجی دھرنے میں زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کریں۔ اس کے علاوہ صوبائی اور مرکزی حکومت سے جامعہ میں پیش آنے والے واقعے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا اور اس واقع کے ذمہ دار جامعہ کے غیر قانونی طور پر مسلط وائس چانسلر اور انتظامیہ کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کا اعلان کیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں